35

کورونا وائرس کا خطرہ، ازدواجی فرائض کی ادائیگی کس طرح کی جائے، سائنسدانوں نے مشورہ دے دیا

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کے سبب دنیا تنہائی میں رہنے اور سماجی میل جول ترک کرنے پر مجبور کر چکی ہے۔ ایسے میں ماہرین نے میاں بیوی کو بھی ازدواجی فرائض کے حوالے سے مفید مشورہ دے دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق پروفیسر پاﺅل ہنٹر نامی ماہر کا کہنا تھا کہ ایسے میاں بیوی جو ایک دوسرے سے الگ رہتے ہیں، انہیں وباءکے ان دنوں میں ازدواجی تعلق قائم نہیں کرنا چاہیے۔ اس کے علاوہ ایسے میاں بیوی جو اکٹھے تو رہتے ہیں لیکن وہ دوسرے لوگوں سے بھی میل جول رکھے ہوئے ہیں، انہیں بھی ازدواجی تعلق سے گریز کرنا چاہیے ورنہ وائرس ایک سے دوسرے فریق کو لاحق ہو سکتا ہے۔

پروفیسر پاﺅل کا کہنا تھا کہ ”جو میاں بیوی ایک ساتھ رہتے ہیں انہیں ازدواجی فرائض کی ادائیگی سے قبل اچھی طرح ہاتھ دھونے چاہئیں، خواہ وہ گھر میں ہی رہ رہے ہوں۔ کسی ایک فریق میں بخار، کھانسی یا دیگر علامات ہوں تو گھر میں ہی 7دن کے لیے الگ ہو جانا چاہیے اور اس دوران جنسی تعلق سے بالکل گریز کرنا چاہیے۔“پروفیسر پاﺅل نے مزید بتایا کہ ”کورونا وائرس سے 70سال سے زائد عمر کے مردوخواتین اور حاملہ عورتوں کو سب سے زیادہ خطرہ ہے۔ ان لوگوں کو حتی الامکان سماجی میل جول سے اجتناب کرنا چاہیے اور اپنے شریک حیات سے بھی فاصلہ رکھنا چاہیے۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں